Pak army zindabad

Pak army zindabad

SHARE

Pak army zindabad

پاک آرمی کی نئی حکمت عملی نے دنیا کو چکرا کر رکھ دیا

تیزی سے بدلتے ہوئے حالات ۔ ۔پاک آرمی کی نئی حکمت عملی نے پوری دنیا چکرا کر رکھ دیا ہے …امریکی سی آئی اے بھارتی را افغانستان این ڈی ایس، اسرائیل کی موساد جیسی چاروں عالمی دشمن ایجنسیوں کے دماغ فیل ہو چکے ہیں کہ پاک آرمی آئی ایس آئی اور ایم آئی کیا کرنے جارہی ہیں اور کیا کرنے والی ہیں ؟
کیونکہ پاک آرمی نے ان کے سارے شیطانی منصوبے سبوتاژ کر دیئے ہیں. دشمنوں نے جن بلوچ دھڑوں پہ سرمایہ کاری تھی وہ دھڑا دھڑ ہتھیار پھینک کر ملکی دھارے میں شمولیت کر رہے ہیں ۔رآؤ انوار جیسے ضمیر فروشوں کے ذریعے وزیرستان میں جو آگ لگانے کی کوشش کی گئی تھی وہ بھی بجھائی جا چکی ہے زینب جیسی بچیوں کے ذریعے ملکی انتشار پیدا کرنے کی کوشش بھی ناکام کردی۔ ختم نبوت پہ قدغن لگا کر وطن بھر میں آگ لگانے کا منصوبہ بھی دھول چاٹ چکا ہے ۔اب پاک آرمی جواباً کاروآئی کی پوزیشن میں آ چکی ہے کشمیر کی آزادی میں دم پھونکا جا چکا ہے ۔پنجابی محاورہ ہے ۔
ہن ساڈی واری ہے‛‛
پاک آرمی افغانستان میں تیارکردہ دہشتگردوں کو انہی کے ملک میں ٹھکانے لگارہی ہے ۔
ﮐﯿﺎ ﺁﭖ ﺟﺎﻧﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﺩﻧﯿﺎ ﮐﺎ ﻭﺍﺣﺪ ﻣﻠﮏ ﮨﮯجس کی ﺳﺐ ﺳﮯ ﺑﮍﯼ ﺍﯾﮑﭩﯿﻮ ﺟﻨﮕﯽ ﺳﺮﺣﺪ ﮨﮯ ﺟﻮ 3600 ﮐﻠﻮ ﻣﯿﭩﺮ پر محیط ہے ﺍﻭﺭ ﺑﺪﻗﺴﻤﺘﯽ ﺳﮯ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮨﯽ ﺩﻧﯿﺎ ﮐﺎ ﻭﺍﺣﺪ ﻣﻠﮏ ﮨﮯ ﺟﻮ ﺑﯿﮏ ﻭﻗﺖ ﺗﯿﻦ ﺧﻮﻓﻨﺎﮎ ﺟﻨﮕﯽ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﯿﻨﺰ ﮐﯽ ﺯﺩ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﮯ ﺑﺎﺭﮮ ﻣﯿﮟ ﺑﮩﺖ ﺗﮭﻮﮌﮮ ﻟﻮﮒ ﺟﺎﻧﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺋﯿﮯ ﺁﺝ ﺫﺭﺍ ﺍس کﮯ ﺑﺎﺭﮮ ﻣﯿﮟ ﺁپ کو ﺑﺘﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ۔۔ !!ﭘﮩﻠﮯ ﻧﻤﺒﺮ ﭘﺮ ﮐﻮﻟﮉ ﺳﭩﺎﺭﭦ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﯿﻦ ‏( INDIAN COLD START DOCTRINE ‏) ﮨﮯ ﺟﻮ بھارت کی ﺟﻨﮕﯽ ﺣﮑﻤﺖ ﻋﻤﻠﯽ ﮨﮯ جس کےلئے ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﯽ ﮐﻞ ﻓﻮﺝ ﮐﯽ 7 ﮐﻤﺎﻧﮉﺯ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ 6 ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﺳﺮﺣﺪ ﭘﺮ ﮈﭘﻠﻮﺋﯿﮉ ﮨﻮ ﭼﮑﯽ ﮨﯿﮟ ﯾﮧ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﯽ ﺗﻘﺮﯾﺒﺎً 80 ﻓﯿﺼﺪ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻓﻮﺝ ﺑﻨﺘﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﯿﻦ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺍﻧﮉﯾﻦ ﻓﻮﺝ ﮐﯽ ﻣﺸﻘﯿﮟ ، ﻓﻮﺟﯽ ﻧﻘﻞ ﻭ ﺣﻤﻞ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺳﮍﮐﻮﮞ ،ﭘﻠﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﺭﯾﻠﻮﮞ ﻻﺋﻨﻮﮞ ﮐﯽ ﺗﻌﻤﯿﺮ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﻠﺤﮯ ﮐﮯ ﺑﮩﺖ ﺑﮍﮮ ﺑﮍﮮ ﮈﭘﻮ ﻧﮩﺎﯾﺖ ﺗﯿﺰ ﺭﻓﺘﺎﺭﯼ ﺳﮯ ﺑﻨﺎﺋﮯ ﺟﺎ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﺱ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﻦ ﮐﮯ ﺗﺤﺖ ﺻﻮﺑﮧ ﺳﻨﺪﮪ ﻣﯿﮟ ﺟﮩﺎﮞ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﻮ ﺟﻐﺮﻓﯿﺎﺋﯽ ﮔﮩﺮﺍﺋﯽ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﮯ ﻭﮦ ﺗﯿﺰﯼ ﺳﮯ ﺩﺍﺧﻞ ﮨﻮﮐﺮ ﺳﻨﺪﮪ ﮐﻮ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﺳﮯ ﮐﺎﭨﺘﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺑﻠﻮﭼﺴﺘﺎﻥ ﮔﻮﺍﺩﺭ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺑﮍﮬﯿﮟ ﮔﯽ ﺍﻭﺭ ﻣﻘﺎﻣﯽ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺍﻧﮑﻮ ﺳﻨﺪﮪ ﻣﯿﮟ ﺟﺴﻘﻢ ﺍﻭﺭ ﺑﻠﻮﭼﺴﺘﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﺑﯽ ﺍﯾﻞ ﺍﮮ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﻮﮔﯽ ۔۔

ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﻮ ﺍﺻﻞ ﺍﻭﺭ ﺳﺐ ﺳﮯ ﺑﮍﺍ ﺧﻄﺮﮦ ﺍﺳﯽ علاقے میں ہے ﺍﻭﺭ ﭘﺎﮎ ﺁﺭﻣﯽ ﺍﻧﮉﯾﻦ ﻓﻮﺝ ﮐﯽ ﺍﺳﯽ ﻧﻘﻞ ﻭ ﺣﺮﮐﺖ ﮐﻮ ﻣﺎﻧﯿﭩﺮ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﺟﻮﺍﺑﯽ ﺣﮑﻤﺖ ﻋﻤﻠﯽ ﺗﯿﺎﺭ ﮐﺮ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ۔۔ ﺁﭖ ﻧﮯ ﺳﻨﺎ ﮨﻮﮔﺎ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﺁﺭﻣﯽ ﮐﯽ ” ﻋﻈﻢ ﻧﻮ ” ﻣﺸﻘﻮﮞ ﮐﮯ ﺑﺎﺭﮮ ﻣﯿﮟ ﺟﻮ ﭘﭽﮭﻠﮯ ﮐﭽﮫ ﺳﺎﻝ ﺳﮯ ﺑﺎﻗﺎﻋﺪﮔﯽ ﺳﮯ ﺟﺎﺭﯼ ﮨﯿﮟ ﯾﮧ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﯽ ﮐﻮﻟﮉ ﺳﭩﺎﺭﭦ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﯿﻦ ﮐﺎ ﺟﻮﺍﺏ ﺗﯿﺎﺭ ﮐﯿﺎ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ جس کے ﺗﺤﺖ ﭘﺎﮎ ﺁﺭﻣﯽ ﺟﺎﺭﺣﺎﻧﮧ ﺩﻓﺎﻉ ﮐﯽ ﺗﯿﺎﺭﯼ ﮐﺮ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﮔﻮ ﮐﮧ ﺍﺱ ﻣﻌﺎﻣﻠﮯ ﻣﯿﮟ ﻃﺎﻗﺖ ﮐﺎ ﺗﻮﺍﺯﻥ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺧﻼﻑ ضرور ﮨﮯ اورﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﯽ ﮐﻢ ﺍﺯ ﮐﻢ 10 ﻻﮐﮫ ﻓﻮﺝ ﮐﮯ ﻣﻘﺎﺑﻠﮯ ﻣﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﺻﺮﻑ ﺩﻭ ﺳﮯ ﮈﮬﺎﺋﯽ ﻻﮐﮫ ﻓﻮﺝ ﺩﺳﺘﯿﺎﺏ ﮨﮯ ﺑﺎﻗﯽ ﺍﻣﺮﯾﮑﻦ ” ﺍﯾﻒ ﭘﺎﮎ ” ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﯿﻦ ﮐﯽ ﺯﺩ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ۔۔۔۔۔۔ !!

ﺍﻣﺮﯾﮑﻦ ﺍﯾﻒ ﭘﯿﮏ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﻦ ‏( AMERICAN AFPAK MILITARY DOCTRINE ‏) ﺑﺎﺭﺍﮎ ﺍﻭﺑﺎمہ ﺍﯾﮉﻣﻨﺴﭩﺮﯾﺸﻦ ﮐﯽ ﺟﻨﮕﯽ ﺣﮑﻤﺖ ﻋﻤﻠﯽ تھی جس پر موجودہ ٹرمپ حکومت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی بلکہ اس کو مزید سخت کرنے کےلئے امریکی دفاعی بجٹ میں مزید اضافہ کیا گیا . حالیہ امریکی وزیر دفاع کا بیان بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اوربھارت کی سرحدی علاقوں میں کشیدگی کسی بھی وقت جنگ میں‌تبدیل ہوسکتی ہے . امریکی وزارت دفاع کا بیان خطے میں کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن کی ایک کڑی ہے جو امریکہ نے پاکستان اوربھارت کے درمیان چین کی بالادستی کو روکنے کےلئے شروع کررکھی ہے . امریکہ پاکستان کےخلاف اپنی جنگی حکمت عملی امریکن ایف پیک ڈاکٹرائن کے تحت ﺍﻓﻐﺎﻥ ﺟﻨﮓ ﮐﻮ ﺑﺘﺪﺭﯾﺞ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﮯ ﺍﻧﺪﺭ ﻟﮯ ﮐﺮ ﺟﺎنا چاہتا ہے جس کے ذریعے ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﭘﺎﮎ ﺁﺭﻣﯽ ﮐﮯ ﺧﻼﻑ ﮔﻮﺭﯾﻼ ﺟﻨﮓ ﺷﺮﻭﻉ ﮐﺮﻭﺍنا مقصود ہے .۔ ﺩﺭﺣﻘﯿﻘﺖ ﯾﮩﯽ ﻭﮦ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﻦ ﮐﮯ ﺟﺲ ﮐﮯ ﺗﺤﺖ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﯽ ﮐﻢ ﺍﺯ ﮐﻢ ﺩﻭ ﻻﮐﮫ ﻓﻮﺝ ﺣﺎﻟﺖ ﺟﻨﮓ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺏ ﺗﮏ ﮨﻢ ﮐﻢ ﺍﺯ ﮐﻢ ﺍﭘﻨﮯ 20 ﮨﺰﺍﺭ ﻓﻮﺟﯽ ﮔﻨﻮﺍ ﭼﮑﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﻮ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﯽ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﻟﮍﯼ ﺟﺎﻧﯽ ﻭﺍﻟﯽ ﺗﯿﻨﻮﮞ ﺟﻨﮕﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺷﮩﯿﺪ ﮨﻮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﯽ ﻣﺠﻤﻮﻋﯽ ﺗﻌﺪﺍﺩ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ ﺍﺱ ﺟﻨﮓ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﺎ ﺁﭘﺲ ﻣﯿﮟ ﺁﭘﺮﯾﺸﻨﻞ ﺍﺗﺤﺎﺩ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﺮﺍﺋﯿﻞ ﮐﯽ ﺗﯿﮑﻨﯿﮑﯽ ﻣﺪﺩ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﮯ . کراچی ،سندھ ،بلوچستان ، تربت ، مستونگ ، خاران ، گلگت بلتستان ،شمالی علاقہ جات اورافغان بارڈر موساد ، امریکہ اوربھارتی انٹلیجنس ایجنسیوں کے ٹارگٹ پر ہیں جس کےلئے افغان مہاجرین اورافغان خفیہ ایجنسی این ڈی ایس کو استعمال کیاجارہا ہے .ﺍﺳﮑﮯ ﻟﯿﮯ ﮐﺮﻡ ﺍﻭﺭ ﮨﻨﮕﻮ ﻣﯿﮟ ﺷﯿﻌﮧ ﺳﻨﯽ ﻓﺴﺎﺩﺍﺕ ﮐﺮﻭﺍﺋﮯ ﮔﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﻭﺍﺩﯼ ﺳﻮﺍﺕ ﻣﯿﮟ ﻧﻔﺎﺫ ﺷﺮﯾﻌﺖ ﮐﮯ ﻧﺎﻡ ﭘﺮ ﺍﯾﺴﮯ ﮔﺮﻭﮦ ﮐﻮ ﻣﺴﻠﻂ ﮐﯿﺎ ﮔﯿﺎ ﺟﻨﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﻭﮨﺎﮞ ﻋﻮﺍﻡ ﭘﺮ ﻣﻈﺎﻟﻢ ﮈﮬﺎﺋﮯ ﺍﻭﺭ ﻓﺴﺎﺩ ﺑﺮﭘﺎ ﮐﯿﺎ ﺟﺲ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﻣﺠﺒﻮﺭﺍً ﭘﮩﻠﯽ ﺑﺎﺭ ﭘﺎﮎ ﻓﻮﺝ ﮐﻮ ﺍﻧﮑﮯ ﺧﻼﻑ ﺍﻥ ﻭﺍﺩﯾﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺩﺍﺧﻞ ﮨﻮﻧﺎ ﭘﮍﺍ ۔۔۔۔۔ ﭘﺎﮎ ﻓﻮﺝ ﻧﮯ ﻋﻤﻠﯽ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺍن کو ﭘﯿﭽﮭﮯ ﺩﮬﮑﯿﻞ ﺩﯾﺎ ﻟﯿﮑﻦ ﻧﻈﺮﯾﺎﺗﯽ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺍﺑﮭﯽ ﺑﮭﯽ ﺍن کو ﺑﮩﺖ ﺳﮯ ﺣﻠﻘﻮﮞ ﮐﯽ ﺑﮭﺮﭘﻮﺭ ﺳﭙﻮﺭﭦ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﮯ ﺟﺴﮑﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﻋﻮﺍﻡ ﺍﭘﻨﯽ ﺁﺭﻣﯽ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮭﮍﯼ ﺟﯿﺴﺎ ﮨﻮﻧﺎ ﭼﺎﮨﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﮑﯽ ﻭﺟﮧ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﺟﻨﮕﯽ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﻦ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﮯ ﺫﺭﯾﻌﮯ ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﮑﮯ ﺍﺗﺤﺎﺩﯼ ﭘﺎﮎ ﺁﺭﻣﯽ ﭘﺮ ﺣﻤﻠﮧ ﺁﻭﺭ ﮨﯿﮟ ﺍﺳﮑﻮ ﻓﻮﺭﺗﮫ ﺟﻨﺮﺯﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮐﮩﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ !!

ﻓﻮﺭتھ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ‏( FOURTH-GENERAT
ION WARFARE MILITARY DOCTRINE ‏) ﺍﯾﮏ ﻧﮩﺎﯾﺖ ﺧﻄﺮﻧﺎﮎ ﺟﻨﮕﯽ ﺣﮑﻤﺖ ﻋﻤﻠﯽ ﮨﮯ ﺟﺴﮑﮯ ﺗﺤﺖ ﻣﻠﮏ ﮐﯽ ﺍﻓﻮﺍﺝ ﺍﻭﺭ ﻋﻮﺍﻡ ﻣﯿﮟ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﻃﺮﯾﻘﻮﮞ ﺳﮯ ﺩﻭﺭﯼ ﭘﯿﺪﺍ ﮐﯽ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ﻣﺮﮐﺰﯼ ﺣﮑﻮﻣﺘﻮﮞ ﮐﻮ ﮐﻤﺰﻭﺭ ﮐﯿﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﺻﻮﺑﺎﺋﯿﺖ ﮐﻮ ﮨﻮﺍ ﺩﮮ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ، ﻟﺴﺎﻧﯽ ﺍﻭﺭ ﻣﺴﻠﮑﯽ ﻓﺴﺎﺩﺍﺕ ﮐﺮﻭﺍﺋﮯ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻋﻮﺍﻡ ﻣﯿﮟ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﻃﺮﯾﻘﻮﮞ ﺳﮯ ﻣﺎﯾﻮﺳﯽ ﺍﻭﺭ ﺫﮨﻨﯽ ﺧﻠﻔﺸﺎﺭ ﭘﮭﯿﻼﯾﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ . ایسی صورتحال میں خیبرپختونخوا اوربلوچستان میں این ڈی ایس کے ساتھ ملکر پاکستان کو کمزور کرنے کی سازش میں اچکزئی اور اے این پی کا بڑا کردار رہا ہے . جو افغان یعنی پختون کے نام پر دشمن ممالک سے فنڈز لیکر پاکستانی پختون نوجوانوں کو پاک فوج کےخلاف جنگ پر اکسا رہے ہیں . فورتھ جنریشن وار کﮯ ﺫﺭﯾﻌﮯ ﮐﺴﯽ ﻣﻠﮏ ﮐﺎ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﺧﺮﯾﺪﺍ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﮑﮯ ﺫﺭﯾﻌﮯ ﻣﻠﮏ ﻣﯿﮟ ﺧﻠﻔﺸﺎﺭ ، ﺍﻧﺎﺭﮐﯽ ﺍﻭﺭ ﺑﮯ ﯾﻘﯿﻨﯽ ﮐﯽ ﮐﯿﻔﯿﺖ ﭘﯿﺪﺍ ﮐﯽ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ۔۔ ﻓﻮﺭﺗھ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﺳﮯ ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ﻧﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﯾﻮﮔﻮﺳﻼﻭﯾﮧ ، ﻋﺮﺍﻕ ﺍﻭﺭ ﻟﯿﺒﯿﺎ ﮐﺎ ﺣﺸﺮ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﺍﺏ ﺍﺱ ﺟﻨﮕﯽ ﺣﮑﻤﺖ ﻋﻤﻠﯽ ﮐﻮ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﺍﻭﺭ ﺳﺮﯾﺎ ﭘﺮ ﺁﺯﻣﺎﯾﺎ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺑﺪﻗﺴﻤﺘﯽ ﺳﮯ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﺍﺱ ﻣﯿﮟ ﮐﺎﻓﯽ ﮐﺎﻣﯿﺎﺑﯽ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﻮ ﭼﮑﯽ ﮨﮯ ..

ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﮯ ﺧﻼﻑ ﻓﻮﺭﺗﮫ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ، ﺍﻧﮉﯾﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﺮﺍﺋﯿﻞ ﺍﺗﺤﺎﺩﯼ ﮨﯿﮟ ﺑﺎﺭﺍﮎ ﺍﻭﺑﺎﻣﺎ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﻣﻨﮧ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻭﮦ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﻣﯿﮟ 50 ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ ﺳﺎﻻﻧﮧ ﺧﺮﭺ ﮐﺮﯾﮟ ﮔﮯ ﺁﺝ ﺗﮏ ﮐﺴﯽ ﻧﮯ ﯾﮧ ﺳﻮﺍﻝ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﭨﮭﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﮐﺲ ﻣﻘﺼﺪ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺍﻭﺭ ﮐﻦ ﮐﻮ ﯾﮧ ﺭﻗﻮﻡ ﺍﺩﺍ ﮐﯽ ﺟﺎئیں گی. ﺟﺒﮑﮧ ﺍﻧﮉﯾﺎ ﮐﺎ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﭘﺮ ﺍﺛﺮﻭﺭﺳﻮﺥ بڑھتا جارہا ہےاب پاکستانی قوم کو سوچنا ہے کہ وہ بھارتی ، اسرائیلی اورامریکی لابی کے ہاتھوں میں کھیل کر اپنا نقصان کرنا پسند کرتے ہیں‌یا پھر دشمن کی سازشوں کا بھرپور جواب دینا مناسب سمجھیں گے۔۔ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﯽ ﺳﺎﺭﯼ ﻗﻮﻡ ﺍﺱ ﺍﻣﺮﯾﮑﻦ ﻓﻮﺭتھ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮐﯽ ﺯﺩ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ۔جس سے بچنا ۔۔ !!
یہ واحد جنگ ہے جس کو اکیلی پاک فوج شکست نہیں دے سکتی جب تک کہ پوری قوم مل کر اس امریکی فورتھ جنریشن وار کو جواب دینے کےلئے تیار نہیں ہوجاتی..ﭼﻮﻧﮑﮧ ﭘﺎﮎ ﺁﺭﻣﯽ ﮐﻮ ﺍﻣﺮﯾﮑﻦ ﺍﯾﻒ ﭘﺎﮎ ﮈﺍﮐﭩﺮﺍﺋﻦ ﮐﮯ ﻣﻘﺎﺑﻠﮯ ﭘﺮ ﻧﮧ ﻋﺪﺍﻟﺘﻮﮞ ﮐﯽ ﻣﺪﺩ ﺣﺎﺻﻞ ﮨﮯ ﻧﮧ ﺳﻮﻝ ﺣﮑﻮﻣﺘﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﮧ ﮨﯽ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﮐﯽ ﺍﺳﻠﺌﮯ ﺑﺎﻭﺟﻮﺩ ﺑﮯ ﺷﻤﺎﺭ ﻗﺮﺑﺎﻧﯿﺎﮞ ﺩﯾﻨﮯ ﮐﮯ ﺍﺱ ﺟﻨﮓ ﮐﻮ ﺍﺏ ﺗﮏ ﺧﺘﻢ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﯿﺎ ﺟﺎ ﺳﮑﺎ ﺍﻭﺭ ﺍس کو ﻣﮑﻤﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺟﯿﺘﺎ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﺎ ﺟﺐ ﺗﮏ ﭘﻮﺭﯼ ﻗﻮﻡ ﻣﻞ ﮐﺮ ﺍﺱ ﺍﻣﺮﯾﮑﻦ ﻓﻮﺭﺗﮫ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮐﺎ ﺟﻮﺍﺏ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﺘﯽ ﻓﻮﺭﺗﮫ ﺟﻨﺮﯾﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﺑﻨﯿﺎﺩﯼ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﮈﺱ ﺍﻧﻔﺎﺭﻣﯿﺸﻦ ﻭﺍﺭ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﮑﺎ ﺟﻮﺍﺏ ﺳﻮﻝ ﺣﮑﻮﻣﺘﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﮐﮯ ﻣﺤﺐ ﻭﻃﻦ ﻋﻨﺎﺻﺮ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ۔ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﻟﮍﯼ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﺍﻟﯽ ﺍﺱ ﺟﻨﮓ ﻣﯿﮟ ﺳﻮﻝ ﺣﮑﻮﻣﺘﻮﮞ ﺳﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﻣﯿﺪ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﺳﻠﺌﮯ ﻋﻮﺍﻡ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮨﺮ ﺷﺨﺺ ﮐﻮ ﺧﻮﺩ ﺍﺱ ﺟﻨﮓ ﻣﯿﮟ ﻋﻤﻠﯽ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺣﺼﮧ ﻟﯿﻨﺎ ﮨﻮﮔﺎ ۔۔۔۔۔۔۔ !!
ﺍﺱ امریکی اوربھارتی ﺣﻤﻠﮯ ﮐﺎ ﺳﺎﺩﮦ ﺟﻮﺍﺏ ﯾﮩﯽ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻋﻮﺍﻡ ۔۔۔
” ﮨﺮ ﺍﺱ ﭼﯿﺰ ﮐﻮ ﺭﺩ ﮐﺮ ﺩﮮ ﺟﻮ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ، ﻧﻈﺮﯾﮧ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﺍﻭﺭ ﺩﻓﺎﻉ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﯾﺎ ﻗﻮﻣﯽ ﺳﻼﻣﺘﯽ ﮐﮯ ﺍﺩﺍﺭﻭﮞ ﭘﺮ ﺣﻤﻠﮧ ﺁﻭﺭ ﮨﻮ ”

 

More Related News

Junaid ansari article

ch nisar in pti

Zaeem qadri news

Petrol price control

London kulsoom nawaz